اس کی امیدیں قلیل اس کے مقاصد جلیل اس کی ادا دلفریب اس کی نگہ دل نواز۔ پہلے مشکل الفاظ کے معنی۔ مقاصد مقصد کی جمع۔ جلیل کا مطلب بلند، اعلیٰ۔ دل فریب، دل کو لوٹ لینے والی۔ دل نواز، دل کو لبھانے والی۔ مردِ مومن کی امیدیں بہت تھوڑی ہوتی ہیں وہ اپنے کسی کام کے لئے دنیا والوں سے اجر اور معاوضے کا خواہاں نہیں ہوتا۔ اس کی غرض صرف یہ ہوتی ہے کہ اس دنیا میں خدا کی رضا پوری ہوجائے۔ کہنے کو یہ معمولی مقصد ہے لیکن حقیقت پر نظر رکھی جائے تو اس سے زیادہ بڑا مقصد ہو ہی نہیں سکتا۔ اس میں وہ تمام مقاصد آ جاتے ہیں جنہیں اس دنیا کے بڑے بڑے انسانوں نے اپنا نصب العین بنایا مثلاً خلقِ خدا کی بہتری، بہبود اور امن، عالمگیر اخوت اور مساوات، تمام انسانوں کو خدا کے سچے بندے بنانا اور سب کو اسی کی چوکھٹ پر جھکانا۔ دنیا میں اس سے بڑے مقاصد کیا ہو سکتے ہیں جو مومن کا نصب العین بنیں؟ اس کی پوری زندگی دیکھ کر انسانوں کے دلوں میں محبت اور احترام کے جذبات پیدا ہوتے ہیں۔ وہ کسی پر عتاب کی نگاہ نہیں ڈالتا۔ وہ ہر ایک کی دلنوازی کرتا ہے۔ ڈاکٹر ذکریا اس شعر کی تشریح میں لکھتے ہیں کہ مرد مومن جب کسی عظیم کام کا آغاز کرتا ہے تو وہ اس میں پوری طرح منہمک ہو جاتا ہے۔ اس کو اس سے غرض نہیں ہوتی کہ وہ اسے مکمل کر سکے گا یا نہیں، کیونکہ اس کا کام تو جہد مسلسل ہے جبکہ تکمیل اللہ کی مرضی پر منحصر ہے۔ بہرحال وہ جو بھی کام کرتا ہے اور دوسرے لوگوں سے اجتماعی فلاح کے لئے جتنا بھی کام لیتا ہے اس دوران اپنے رفقاء کے ساتھ اس کا رویہ خوشدلی اور خوش نگاہی کا ہوتا ہے۔ مطلب یہ کہ وہ تمام ساتھیوں کو اچھے ماحول اور اچھے جذبات کے ساتھ اپنے ہمراہ لے کر چلتا ہے۔

تبصرہ کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Shopping Cart
Scroll to Top